Tuesday, May 28, 2024

پاکستانی عازمین حج کو 55000 روپے واپس کیے جائیں گے

- Advertisement -

کراچی، وزارت مذہبی امور اور بین المذاہب ہم آہنگی نے اعلان کیا کہ وہ ممکنہ عازمین حج کو قربانی کی رقم کے طور پر 55,000 روپے واپس کریں گے۔

وزیر مذہبی امور سینیٹر محمد طلحہ محمود کی خصوصی ہدایات پر حج کے لیے سعودی عرب روانگی سے قبل ریگولر اور سپانسر شپ سکیم کے عازمین کو یہ رقم واپس کر دی جائے گی۔

وزارت نے ایک پریس ریلیز میں باقاعدہ اور سپانسر شدہ دونوں پروگراموں کے عازمین کو ہدایت کی کہ وہ روانگی سے قبل اپنے متعلقہ بینکوں سے 55,000 روپے نکال لیں کیونکہ انہیں سعودی عرب میں واپس نہیں ملیں گے۔

انہوں نے کہا سعودی حکومت کے زیر انتظام قربانی کے بوتھ سرکاری رہائش گاہوں کے قریب واقع ہوں گے، جس سے واؤچرز خریدنے کے عمل کو آسان بنایا جائے گا۔

انگلش میں خبرِیں پڑھنے کے لیے یہاں کلک کریں

بیان میں کہا گیا ہے کہ اگر قربانی کی رقم حاصل کرنے میں کوئی پریشانی یا دشواری ہو تو وزارت کے اکاؤنٹس افسر سے فوری طور پر 0519208552 پر رابطہ کیا جا سکتا ہے۔

یہ انتخاب وزیر مذہبی امور سینیٹر طلحہ محمود کے اعلان کے چند ہفتے بعد کیا گیا ہے کہ اس سال کا حج قربانی کے جانوروں کی قیمت سے پاک ہوگا۔

سال 2023میں پاکستان کے پاس حج کے لیے 179,210 عازمین کا کوٹہ ہے۔ یہ بات واضح رہے کہ اسپانسر شپ اسکیم کے لیے پچاس فیصد کوٹہ مختص کیا گیا تھا، جو کہ وزارت مذہبی امور کے خاص ڈالر اکاؤنٹ میں بیرون ملک سے زرمبادلہ حاصل کرنے والے عازمین حج کو دی جانے والی اہم سہولت ہے۔

حج کی لاگت

حکومت نے اس سال حج میں شرکت کی لاگت 1.175 ملین روپے فی حاجی مقرر کی ہے جو گزشتہ سال کے اخراجات سے 68 فیصد زیادہ ہے۔ بظاہر، اس بڑھتی ہوئی لاگت نے بہت سے مسلمانوں کو آسمان چھوتی مہنگائی کے پیش نظر یہ رسم ادا نہ کرنے کا فیصلہ کرنے پر مجبور کیا۔

فلائٹ آپریشن کے حوالے سے ملک کی فلیگ ایئر لائن پاکستان انٹرنیشنل ایئر لائنز (پی آئی اے) نے پہلے اعلان کیا تھا کہ اس کا قبل از حج آپریشن 21 مئی سے شروع ہو کر 12 اگست تک جاری رہے گا جس کے دوران وہ 38 ہزار عازمین کو ارض مقدس لے جائے گی۔

پی آئی اے کے حج سرکلر کے مطابق، قبل از حج آپریشن یکم ذوالقعد سے شروع ہو کر 4 ذی الحج، 1444 گریگورین تاریخ کے مطابق 22 جون 2023 تک جاری رہے گا۔

قابل ذکر ہے کہ سعودی عرب اب پہلی بار 2.3 ملین عازمین حج کو اس وبا کی سفری پابندیاں ختم کرنے کے قابل ہو گیا ہے۔ 2022 کے حج سیزن میں 10 لاکھ افراد نے شرکت کی، تاہم صرف 18 سے 65 سال کی عمر کے افراد جنہوں نے وائرس کے خلاف حفاظتی ٹیکوں کا عمل مکمل کر لیا تھا اور جن کو کوئی دائمی بیماری نہیں تھی انہیں ملک کا سفر کرنے کی اجازت تھی۔

اسی مصنف کے اور مضامین
- Advertisment -

مقبول خبریں