Thursday, February 29, 2024

پاکستانی خاتون نے ہاتھ سے سلا ہوا پہلا قرآن پاک تیار کیا

- Advertisement -

پاکستان سے تعلق رکھنے والی خاتون نسیم نے سب سے پہلے قرآن پاک کو ہاتھ سے سی کر تیارکیا ہے۔ یہ آرٹ ورک ایک شاہکار ہے اوراسلام سے ان کی وابستگی ومحبت کو ظاہر کرتا ہے۔

اب تک کا پہلا ہاتھ سے سلا ہوا قرآن پاک سوتی مواد سے بنا ہے اور اس کا وزن 60 کلوگرام ہے۔ خاتون نے اس کڑھائی کے لیے سنہری حیرت انگیز کنٹراسٹ استعمال کیا۔ اس نے قرآن پاک کے سرورق پر ریشم کی سرحد کی نقل کرنے کے لیے ہر باب کے لیے ایک ہی نمونہ استعمال کیاہے۔

نسیم اختر نامی ایک پاکستانی خاتون اسلام سے محبت کی وجہ سے کافی مشہورہوئی ہیں۔ اسلام کے لیے ان کی محبت اور جذبے کی کوششیں 32 سال سے جاری تھیں۔

انگلش میں خبریں پڑھنے کے لئے یہاں کلک کریں

منفرد کور پیج 

اس نے ہر باب کے پہلے صفحہ کے لیے ایک منفرد کور پیج بنایا ہے۔ مزید برآں، اس نے قرآن کی ہر آیت کو متحرک سبز رنگ میں سیا ہے۔ انہوں نے مشین کا استعمال بلکل نہیں کیا۔ پورے قرآن پر ساری محنت ہاتھ سے کی گئی ہے۔ اس نے اس مخصوص کام کے لیے کسی اور سے مدد کی درخواست بھی نہیں کی۔ اس نے خود پورا قرآن اپنے ہاتھ سے لکھا ہے۔

یہ آرٹ ورک نسیم اختر نے تقریباً 32 سال کے عرصے میں تخلیق کیا۔ جب وہ ایک بلکل نوجوان خاتون تھیں ان کے ذہن میں اچانک یہ خیال آیا اور اس نے بغیر کسی ہچکچاہٹ کے اس پر عمل کیا۔ لیکن وہ اس بات سے بے خبر تھیں کہ جس پراجیکٹ پر وہ کام کر رہی تھیں اسے مکمل ہونے میں کئی دہائیاں لگ جاِئیں گی۔

ایک انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ 32 سال تک اس پروجیکٹ پر کام کرنے سے انہیں سکون اور اطمینان ملا ہے۔ اس نے اس سنگ میل تک پہنچنے پر اپنی خوشی کا اظہار بھی کیا، جس میں کافی وقت لگا۔ انہوں نے کہا مجھے اس بات پر فخر ہے کہ میں نے یہ کام کیااوراپنی زندگی اس کام کے لیےوقف کی۔

مزید برآں، نسیم اختر کو سعودی عرب کا دعوت نامہ دیا گیا جہاں سعودی حکام کو معلوم ہوا کہ نسیم اختر نے ایک شاہکار تخلیق کیا ہے۔ لوگ ان کی تخلیقات کو مدینہ منورہ کی قرآن پاک نمائش میں دیکھ سکتے ہیں۔

اسی مصنف کے اور مضامین
- Advertisment -

مقبول خبریں