Wednesday, April 24, 2024

اے سی سی پاکستان کے بغیر ایشیا کپ کے لیے تیارہے

- Advertisement -

بھارتی میڈیا کے مطابق ایشیا کپ کی تیاری ایشین کرکٹ کونسل اے سی سی کر رہی ہے تاہم پاکستان اس بار شاید ایشیا کپ نہیں کھیلے گا۔

بی سی سی آئی کے سیکرٹری اور اے سی سی کے چیئرمین جے شاہ نے ایشیا کپ کے لیے دوسرے ممالک پر واضح کر دیا ہے کہ وہ پاکستان کرکٹ بورڈ پی سی بی کے تجویز کردہ ہائبرڈ ماڈل کو قبول نہیں کریں گے۔ شاہ نے حال ہی میں رکن ممالک کے سربراہوں کے ساتھ اس پر تبادلہ خیال کیا اور تجویز پیش کی کہ ٹورنامنٹ ایک ہی مقام پر ہونا چاہیے۔

پی سی بی نے ایک ہائبرڈ ماڈل تجویز کیا تھا، جس کے تحت ٹورنامنٹ کے ابتدائی مرحلے میں گروپ مرحلے کے ابتدائی چار میچز پاکستان میں کھیلے جائیں گے۔

انگلش میں خبریں پڑھنے کے لیے یہاں کلک کریں

اگلے مراحل

مزید یہ کہ اگلا مرحلہ جس میں بھارت کے میچز اور فائنل شامل ہیں، ایک نیوٹرل مقام پر کھیلا جانا ہے۔ اس صورت حال میں پاکستان اپنا گروپ مرحلے کا میچ نیپال کے خلاف ہوم گراؤنڈ پر کھیلے گا۔ اسی طرح سری لنکا، بنگلہ دیش اور افغانستان بھی پاکستان میں اپنے پول میچ کھیلیں گے۔ پی سی بی نے دبئی کو ہائبرڈ فریم ورک کے اندر ایک پسندیدہ غیر جانبدار مقام کے طور پر نامزد کیا تھا۔

رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ پاکستان کو اے سی سی کے اگلے ایگزیکٹو بورڈ اجلاس کے دوران بتایا جائے گا کہ دیگر تمام شریک ممالک سری لنکا میں کھیلنے پر رضامند ہو گئے ہیں۔

نامزد میزبان کے طور پر پی سی بی کو سری لنکا میں کھیلنا ہوگا یا دستبردار ہونا پڑے گا۔ اس صورت میں، بھارت، سری لنکا، بنگلہ دیش اور افغانستان وہ چار ٹیمیں ہوں گی جن میں پانچویں ٹیم کی شمولیت کا فیصلہ ہونا باقی ہے۔

بھارت کا دورہ پاکستان سے انکار اور ہائبرڈ ماڈل کو قبول نہ کرنا پاکستان کو ورلڈ کپ سے باہر ہونے پر غور کرنے پر مجبور کر سکتا ہے۔ پی سی بی نے مبینہ طور پر آئی سی سی حکام کو آگاہ کیا ہے کہ ورلڈ کپ میں ان کی شرکت کا انحصار حکومتی منظوری پر ہے۔

اسی مصنف کے اور مضامین
- Advertisment -

مقبول خبریں