Thursday, May 30, 2024

عید کے بعد جماعت اسلامی سیاسی بحث کے لیے اے پی سی کی میزبانی کرے گی۔

- Advertisement -

جماعت اسلامی کے زیر اہتمام سیاسی مذاکرات پر آل پارٹیز کانفرنس ہو گی، سراج الحق کی تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان سے ملاقات کریں گے، اسکےعلاوہ جے آئی کے وفد نے وزیر اعظم شہباز شریف سے بات بھی کی۔

لاہور، عید الفطر کے بعد جماعت اسلامی (جے آئی) کی جانب سے سیاسی جماعتوں کے درمیان جاری مسئلے پر ڈیڈ لاک کو ختم کرنے کے لیے آل پارٹیز کانفرنس (اے پی سی) بلانے کا امکان ہے۔

جماعت اسلامی کے سیکرٹری اطلاعات قیصر شریف کے مطابق اے پی سی تمام سیاسی جماعتوں سے مشاورتی عمل کی تکمیل کے بعد منعقد کی جائے گی۔ انہوں نے اعلان کیا کہ عید کے بعد امیر جماعت اسلامی سراج الحق مختلف سیاسی جماعتوں کے سربراہان سے ملاقات کریں گے تاکہ معاہدہ طے پا سکے۔

انگلش میں خبریں پڑھنے کے لئے یہاں کلک کریں

انہوں نے کہا کہ،جے آئ ایک نکاتی انتخابی پلیٹ فارم پر کام کر رہی ہے۔ ان کے مطابق جماعت اسلامی ملک گیر انتخابات کی خواہاں ہے جس میں تمام جماعتیں حصہ لے سکیں۔

جماعت اسلامی قومی انتخابات کی میزبانی کے لیے انتظامیہ اور اپوزیشن کے درمیان سیاسی تعطل کو دور کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔

سیاسی جماعتوں سے مذاکرات کا مقصد 

پارٹی کا مقصد انتخابات کے انعقاد کے حوالے سے اختلافات کو دور کرنا ہے اور سیاسی جماعتوں کو مذاکرات کی میز پر لانے کی کوششیں کر رہی ہے۔ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے سربراہ عمران خان اور وزیر اعظم شہباز شریف کو پارٹی کی طرف سے مدعو کیا جائے گا،

جے آئی حکومت کو اکتوبر سے پہلے انتخابات کے انعقاد پر رضامندی پر آمادہ کرنے اور پی ٹی آئی کو مئی کے بعد انتخابات کرانے پر راضی کرنے کے لیے کام کر رہی ہے۔

معاملات کو آگے بہتر طریقے سے آگے بڑھانے کے لیے مسلم لیگ ن نے پارٹی ایاز صادق اور سینئر رہنما خواجہ سعد رفیق کو نامزد کیا ہے۔ اے پی سی سے قبل پی ٹی آئی اور مسلم لیگ ن کے نامزد کردہ وفود سے اضافی ملاقاتیں ہوں گی۔

تحریک انصاف نے جماعت اسلامی سے سیاسی مفاہمت کے لیے تین رکنی کمیٹی قائم کر دی ہے۔ سابق وزیر دفاع پرویز خٹک، پی ٹی آئی کے سینیٹر اعجاز احمد چوہدری اور پنجاب کے سابق وزیر میاں محمود الرشید سبھی کمیٹی کے ارکان ہیں۔

بحران کے حل کے لیے جماعت اسلامی کے سربراہ سراج الحق نے وزیراعظم اور پی ٹی آئی کے سربراہ عمران خان سے ابتدائی الگ الگ ملاقاتیں کی ہیں۔

اسی مصنف کے اور مضامین
- Advertisment -

مقبول خبریں