Thursday, May 30, 2024

عید کے بعد تاجروں نے مہنگائی کے خلاف ملک گیر مظاہروں کا اعلان کر دیا۔

- Advertisement -

پاکستان میں بڑھتی ہوئی مہنگائی اور بگڑتے ہوئے معاشی حالات کے ردعمل میں انجمن تاجران نے عید الفطر کے بعد ملک گیر احتجاج کرنے کا اعلان کر دیا ہے۔

مرکز تنظیم تاجران کے صدر محمد کاشف چوہدری نے ایک نیوز کانفرنس کے دوران کہا کہ اگر مہنگائی کے  یہ مسائل حل نہ ہوئے تو ملک بھر کے تاجر کنونشن اور احتجاج کریں گے۔

کاشف چوہدری نے حکومت پر تنقید کی کہ وہ خام تیل کی قیمتوں میں کمی کے فوائد عوام تک پہنچانے میں ناکام رہی ہے،جبکہ غیر ترقیاتی اخراجات کی سطح کو کو کم کرنے سے انکار کر رہی ہے۔ موجودہ بحران سے نمٹنے کے لیے انہوں نے سیاست دانوں پر بھی زور دیا کہ وہ میثاق جمہوریت پر اتفاق کریں اور غیر ترقیاتی اخراجات میں فوری طور پر 50 فیصد کمی کا مطالبہ کیا۔

انگلش میں خبریں پڑھنے کے لئے یہاں کلک کریں 

چوہدری کے مطابق حکومت کا رمضان ریلیف پروگرام غریبوں کے لیے ذلت کا باعث ہے کیونکہ انہیں ناقص کوالٹی کے آٹے کے لیےکے لیے لمبی لائنوں میں کھڑا کیا جاتا ہے۔ انہوں نے پارلیمانی مافیاز پر آٹے کے بحران کے ذمہ دار ہونے کا الزام لگایا اور تاجروں کو اردو میں انکم ٹیکس فارم فراہم کیے بغیر پوائنٹ آف سیل پر ایف بی آر کے چھاپوں پر تشویش کا اظہار بھی کیا۔

پاکستان بیورو آف شماریات کے مطابق، یہ اعلان اس وقت سامنے آیا ہے جب پاکستان میں افراط زر کی شرح ایک سال پہلے کے مقابلے میں 35.4 فیصد بڑھنے کے ساتھ، ہر وقت کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی ہے۔ تجزیہ کاروں کا خیال ہے کہ بنیادی افراط زر میں تیزی سے اضافے کے نتیجے میں پاکستان انتہائی مہنگائی کے دہانے پر ہے، جس میں بجلی اور خوراک کی قیمتیں شامل نہیں ہیں۔

اسی مصنف کے اور مضامین
- Advertisment -

مقبول خبریں