Wednesday, April 24, 2024

چین کے وزیر خارجہ کی پاکستان آمد

- Advertisement -

دفتر خارجہ نے کہا ہے کہ پاک چین سٹریٹجک ڈائیلاگ میں چین کے سٹیٹ کونسلر اور وزیر خارجہ کن گینگ شرکت کریں گے، جو 5 مئی سے شروع ہونے والے دو روزہ سرکاری دورے پر پاکستان جائیں گے۔

چین کے وزیر خارجہ کا عہدہ سنبھالنے کے بعد ان کا پاکستان کا پہلا سرکاری دورہ ہوگا۔

پاکستان کے وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری اور چین کے وزیر خارجہ کن گینگ پاک چین اسٹریٹجک ڈائیلاگ کے چوتھے ایڈیشن کی مشترکہ صدارت کریں گے۔ انکا مقصد اہم شعبوں میں دو طرفہ تعاون کا جائزہ لینا ہے۔

دفتر خارجہ کے مطابق دونوں فریق سٹریٹجک ڈائیلاگ کے دوران پاکستان اور چین کے درمیان ہمہ موسمی تزویراتی تعاون پر مبنی شراکت داری کی جاری اہمیت کا اعادہ کریں گے۔

انگلش میں خبریں پڑھنے کے لئے یہاں کلک کریں 

ایف او کے مطابق، وہ بدلتے ہوئے علاقائی اور عالمی منظر نامے کے بارے میں بھی بات کریں گے اور کثیر جہتی تعاون کے لیے ایک روڈ میپ بنائیں گے۔

جولائی 2021 میں، پاکستان چین سٹریٹجک ڈائیلاگ کا تیسرا اجلاس چینگڈو، چین میں ہوا تھا۔

پاکستان میں دورے کا مقصد

کن کا آئندہ دورہ پاکستان اور چین کے تعلقات کی اہمیت اور اپنی سٹریٹجک شراکت داری کو مزید مضبوط بنانے کے عزم کو اجاگر کرنا ہے۔ چین کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے آج ایک بیان میں کن کے دورہ پاکستان کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ یہ چین اور پاکستان کے اعلیٰ سطحی عہدیداروں کے درمیان حالیہ قریبی اور متواتر تبادلوں کا ایک اہم جزو ہے۔

ان کا کہنا ہےکہ، اس دورے کے دوران دونوں فریقین ذاتی طور پر دوطرفہ تعلقات کے ساتھ ساتھ مجموعی عالمی اور علاقائی صورتحال پر بھی بات چیت کریں گے۔

ترجمان نے اس بات کا اعادہ کیا کہ چین اور پاکستان اٹوٹ دوست ہیں اور ان کا ہر موسم کا تزویراتی تعاون پر مبنی اتحاد ہے۔

ترجمان نے گزشتہ سال نومبر میں وزیر اعظم شہباز شریف کےکامیاب دورہ چین کا حوالہ دیا، جس کے دوران دونوں ممالک کے رہنماؤں نے اپنے دوطرفہ تعلقات کی راہ ہموار کی۔ چین اور پاکستان کے وزرائے اعظم نے 27 اپریل کو اپنے اسٹریٹجک اتحاد کو مضبوط بنانے کے لیے فون پربھی بات کی۔

چین کو امید ہے کہ یہ دورہ دونوں ممالک کے رہنماؤں کے درمیان اہم مشترکہ مفاہمت کی پیروی کرے گا، اسٹریٹجک مواصلات اور عملی تعاون کو مزید گہرا کرے گا، نئے دور میں مشترکہ مستقبل کے ساتھ چین پاکستان کمیونٹی کی مزید قریبی تعمیر کو فروغ دے گا، اور خطے اور وسیع تر دنیا کے لیے مثبت توانائی فراہم کرے گا۔

اسی مصنف کے اور مضامین
- Advertisment -

مقبول خبریں