Tuesday, May 28, 2024

پاکستان میں مونکی پوکس کے کیسز پائے گئے،خصوصی ہدایات جاری

- Advertisement -

زرائع کے مطابق پاکستان میں مونکی پوکس کے دو کیسز پہلی بار رپورٹ ہوئے اور بعد میں محکمہ صحت کی جانب سے تصدیق کی گئی۔

وزارت صحت کے ذرائع کے مطابق مونکی پوکس کے مریضوں کا تعلق راولپنڈی اور اسلام آباد سے ہے۔ ذرائع سے ملنے والی اضافی معلومات کے مطابق دونوں مریض 17 اپریل کو سعودی عرب سے ایک ہی پرواز سے پاکستان پہنچے تھے اور ان میں متعدی بیماری کی علامات ظاہر ہو رہی تھیں۔

انگلش میں خبریں پڑھنے کے لئے یہاں کلک کریں 

ذرائع کے مطابق ایم پی اوکس کے متاثرین کو پاکستان انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز (پمز) اسپتال منتقل کیا گیا تھا اور نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ہیلتھ (این آئی ایچ) نے ان سے خون کے نمونے حاصل کیے تھے۔

وزارت صحت کے ترجمان نے این آئی ایچ کی طرف سے جاری کردہ دونوں مریضوں کی ٹیسٹ رپورٹس کے مطابق مونکی پوکس کی متعدی بیماری کا پتہ لگانے کی تصدیق کی۔

پمز کے ترجمان نے بتایا کہ ایک مریض اب ہسپتال میں زیر علاج ہے اور اس کی صحت مستحکم ہے، جب کہ دوسرے مریض کو گھر میں الگ تھلگ کیا جا رہا ہے۔

ایئرپورٹ کے لیے مخصوص قوانین

مونکی پوکس کے کیسز سامنے آنے کے بعد محکمہ صحت نے ملک بھر کے ہوائی اڈوں کو خصوصی ہدایات جاری کیں۔

ضوابط کے مطابق ایئرپورٹ انتظامیہ بیرون ملک سے آنے والے ہر مسافر کی صحت کی جانچ کرے گی اور ایئرپورٹ کے عملے کو ماسک پہننا لازمی ہے۔ مزید برآں، پورٹرز کو ماسک اور دستانے پہننے کی ضرورت ہے۔

مزید برآں، ملک کے ہوائی اڈوں پر مسافروں کو کوئی پروٹوکول فراہم نہیں کیا جائے گا۔ ہر مسافر کا مکمل طبی معائنہ کیا جائے گا۔ مشتبہ مسافروں کوالگ کر کے انہیں فوراً اسپتال منتقل کیا جائے گا۔

وزارت صحت کے ترجمان کے مطابق بارڈر اینڈ ہیلتھ سروسز آرگنائزیشن صورتحال پر گہری نظر رکھے ہوئےہیں، اور تمام ہوائی اڈے صحت کی ضروریات کو نافذ کر رہے ہیں۔

صوبہ سندھ کے اسپتال ہائی الرٹ ہیں۔

مونکی پوکس کے کیسز کے بعد سندھ بھر کے اسپتالوں کو ہائی الرٹ کر دیا گیا اور حکام نے مشتبہ مریضوں کے لیے آئسولیشن ایریاز قائم کرنے کی ہدایات جاری کیں۔

ڈائریکٹر جنرل ہیلتھ سروسز سندھ کی جانب سے تمام سرکاری اسپتالوں کو مونکی پوکس کے مریضوں کے لیے 5 سے 10 بستروں پر مشتمل آئسولیشن سہولیات بنانے کی ہدایات دی گئی ہیں۔

اسی مصنف کے اور مضامین
- Advertisment -

مقبول خبریں