Tuesday, May 28, 2024

ڈالر کی کمی کے باعث ایف بی آر نے غیر ملکی مسافروں کے لیے ڈالر کی حد مقرر کر دی۔

- Advertisement -

اسلام آباد: ملک میں کرنسی کی کمی کے باعث فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) نے غیر ملکی مسافروں کے لیے ڈالر کی حد مقرر کردی۔

(ایف بی آر) مسافروں پر ڈالر کی حد مقرر کرتا ہے کیونکہ ملک میں ڈالرز کی کمی کی وجہ سے سالانہ 30,000 ڈالر سے زیادہ کا بیرون ملک جانے پر پابندی ہے۔ افغانستان جانے والوں کو صرف 30,000 ڈالر سالانہ کی اجازت ہوگی۔

انگلش میں پڑھنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) نے یہ بھی کہا ہے کہ 18 سال سے زیادہ عمر کے افراد ہر بین الاقوامی دورے پر 5000 ڈالر تک لے جا سکتے ہیں، جب کہ 18 سال سے کم عمر کے افراد غیر ملکی دوروں کے لیے 2000 ڈالرز تک لے سکتے ہیں۔ خط میں یہ بھی بتایا گیا کہ 18 سال سے کم عمر کے افراد ہر سال 15,000 ڈالر لے جا سکیں گے، جب کہ 18 سال سے زیادہ عمر کے افراد کو سالانہ 30,000 ڈالر لے جانے کی اجازت ہوگی۔

ڈالر کی کمی کے باعث ایف بی آر نے غیر ملکی مسافروں کے لیے ڈالر کی حد مقرر کر دی۔

ایف بی آر نے اپنے نوٹیفکیشن میں یہ بھی کہا کہ افغانستان آنے والے زائرین ہر دورے پر 1000 ڈالر لے جانے تک محدود ہوں گے اور انہیں سالانہ 6000 ڈالر سے زیادہ لے جانے کی اجازت نہیں ہوگی۔ بیرون ملک سفر کرنے والوں کو یہ اعلان کرنا چاہیے کہ آیا وہ سونا، زیورات، یا قیمتی دھاتیں لے کر جا رہے ہیں، اور واپس آنے والوں کو یہ اعلان کرنا چاہیے کہ آیا وہ 10,000 یا اس سے زیادہ لا رہے ہیں۔ اطلاع کے مطابق

اسی مصنف کے اور مضامین
- Advertisment -

مقبول خبریں