Thursday, May 30, 2024

ای سی سی نے مزید 402 ارب روپے کی منظوری دے دی

- Advertisement -

ای سی سی نے پیر کو اگلے مالی سال کے لیے اپنے بیرونی قرضوں کی ادائیگی کے لیے 402 ارب روپے سے زائد ضمنی گرانٹس کی منظوری دے دی۔

وزارت خزانہ کی جانب سے جاری کردہ پریس ریلیز کے مطابق ای سی سی نے غیر ملکی قرضوں اور کریڈٹس کے قرض کی ادائیگی کے لیے 402.3 ارب روپے اضافی گرانٹ کے طور پر منظور کیے ہیں۔

انگلش میں پڑھنے کے لئے یہاں کلک کریں

کابینہ کی اقتصادی رابطہ کمیٹی (ای سی سی) نے 444 ارب روپے کے وفاقی بجٹ کو براہ راست متاثر کرنے والے مختلف فیصلوں کی منظوری دی۔ جس میں سکھر-حیدرآباد موٹروے کے لیے 9.5 ارب روپے کی رقم میں خودمختار ضمانتوں کی فراہمی بھی شامل ہے۔

ای سی سی، جس کی قیادت وزیر خزانہ اسحاق ڈار کر رہے ہیں، انہوں نے 49 ادویات کے نرخ بھی مقرر کیے جو پاکستان میں پہلی بار دستیاب ہو رہی ہیں۔

قرض کی ادائیگی

قومی اسمبلی نے رواں مالی سال کے لیے غیر ملکی قرضوں اور قلیل مدتی غیر ملکی تجارتی قرضوں پر سود کی ادائیگی کے لیے کل 4.4 کھرب روپے کے بجٹ کی منظوری دے دی ہے۔

ای سی سی کو بتایا گیا کہ قلیل مدتی قرضوں کی ادائیگی کے لیے 142 ارب روپے اور غیر ملکی قرضوں پر سود کی ادائیگی کے لیے 511 ارب روپے کی بجٹ رقم ناکافی ہے۔

ذرائع کے مطابق، متعدد بین الاقوامی کمرشل بینکوں کی جانب سے اپنے قرضوں میں توسیع سے انکار کے بعد غیر متوقع بیرونی قرضوں کی ادائیگیوں کے نتیجے میں مختصر مدت کے غیر ملکی قرضوں کی ادائیگی 142 ارب روپے کے اصل بجٹ سے بڑھ کر 331 ارب روپے ہو گئی ہے۔

اسی طرح قومی اسمبلی نے غیر ملکی قرضوں پر سود کی ادائیگی کے لیے 511 ارب روپے کی منظوری دی ہے۔ ذرائع کے مطابق وزارت اقتصادی امور نے کرنسی کی قدر میں کمی کے نتیجے میں اب غیر ملکی قرضوں پر سود کے اخراجات کا تخمینہ 725.4 ارب روپے لگایا ہے۔ جس سے 214.3 ارب روپے کا شارٹ فال رہ گیا ہے۔

دیگر فیصلے

ای سی سی نے 9.5 بلین روپے کی رقم میں حیدر آباد سکھر موٹر وے کی تعمیر اور منتقلی کے لیے خودمختار گارنٹی جاری کرنے کی بھی منظوری دی۔ بولی لگانے والا پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ کے حصے کے طور پر اس پراجیکٹ میں اپنی 307 بلین روپے کی سرمایہ کاری کرے گا جس کی مالی اعانت ٹول ریونیو سے کی جائے گی۔

نیشنل کرائسز مینجمنٹ اتھارٹی کے ذخائر کو دوبارہ بھرنے کی ضرورت ہے تاکہ آنے والے کسی بھی بحران سے نمٹنے کے لیے بہتر طور پر تیار ہو۔

اس طرح ای سی سی نے امدادی سامان کی خریداری کے لیے 12 ارب روپے کی اضافی فنڈنگ کی منظوری بھی دی۔

پاور ڈویژن کے 1320 میگاواٹ کے کوئلے سے چلنے والے پاور پروجیکٹ جامشورو کے نفاذ کے لیے ای سی سی نے 9.2 بلین روپے کی اضافی گرانٹ کی منظوری دی۔

وزیر خزانہ کے مطابق ای سی سی نے وزارت نیشنل ہیلتھ سروسز کے ایک بیان کو مدنظر رکھا اور مکمل بحث کے بعد 49 نئی ادویات کے لیے زیادہ سے زیادہ خوردہ قیمتیں اس بنیاد پر مقرر کرنے کی منظوری دی کہ وہ سرحدی ممالک کے مقابلے میں کم مہنگی ہیں۔

ہینڈ آؤٹ کے مطابق، ان میں سے زیادہ تر دوائیں پاکستان میں پہلی بار ان نرخوں پر فروخت کی جا رہی ہیں جو پڑوس میں موجود ادویات سے کہیں کم ہیں۔

نیو گوادر بین الاقوامی ہوائی اڈہ، جس کے پاکستان کو اس سال ستمبر تک مکمل ہونے کی امید ہے، ای سی سی نے 839 ملین روپے کے اضافی فنڈز کی منظوری دی تھی۔

مختلف ذرائع سے فراہم کردہ خدمات کے عوض سرکاری اداروں کو ادائیگی کے لیے اسٹیبلشمنٹ ڈویژن کے لیے 140.6 ملین روپے کی رقم دی گئی۔ تنخواہوں کی ادائیگی میں کمی کو پورا کرنے کے لیے وزارت اطلاعات کو 700 ملین روپے دیے گئے۔

اسی مصنف کے اور مضامین
- Advertisment -

مقبول خبریں