Tuesday, May 28, 2024

پنشن سکینڈل کے ملزم کے بینک اکاؤنٹس کی فرانزک عدالت کا حکم۔

- Advertisement -

کراچی: احتساب عدالت نے بدھ کو حکم دیا کہ 3.2 ارب کے پنشن فراڈ میں ملوث ملزمان کے بینک اکاؤنٹس کی فرانزک جانچ پڑتال کی جائے۔

پنشن کے بحران میں 17 مشتبہ افراد نے اپنے بینک کھاتوں کی فرانزک جانچ کے لیے عدالت سے درخواست کی تھی۔ عدالت نے نیب ریفرنس کی سماعت 4 جنوری 2004 تک جاری رکھی۔

جن ملزمان نے اس حوالے سے بیان حلفی دیے تھے انہیں عدالت نے پہلے اپنے بینک اکاؤنٹس کی فرانزک جانچ پڑتال کرنے کی ہدایت کی تھی۔ ملزم کا کہنا تھا کہ ‘ہمارے علم میں لائے بغیر ہمارے نام پر اکاؤنٹس کھولے گئے’۔

عدالت میں گواہی دینے والے قومی احتساب بیورو کے مطابق ملزم عامر اسران کو امریکہ سے واپسی پر حراست میں لیا گیا۔ انہیں محکمہ پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ کا قلمدان سونپا گیا۔

انگلش میں پڑھنے کے لیے یہاں کلک کریں

ملزم پنشن سکینڈل میں ملوث سمجھا جاتا ہے۔ ملزمان سے قومی خزانے کو مبینہ طور پر 3.2 ارب روپے کا نقصان پہنچا۔

احتساب کے نگران ادارے نے بدانتظامی کے الزامات کی تحقیقات کے دوران پنشن فنڈز کی چوری کے لیے اہلکاروں کی جانب سے استعمال کیے گئے نو اضافی فرضی بینک اکاؤنٹس کا پتہ لگایا تھا۔

نئے بوگس بینک اکاؤنٹس تلاش کرنے کے ساتھ ساتھ، نیب نے “جھوٹی پنشن (کمیوٹیشن) انوائسز” کے ذریعے اربوں ڈالر کی عوامی رقم چوری کرنے کی اسکیم کا بھی سراغ لگایا۔

اسی مصنف کے اور مضامین
- Advertisment -

مقبول خبریں