Tuesday, May 28, 2024

ہوم انشورنس خصوصیات اور فوائد کے ساتھ

- Advertisement -

ہوم انشورنس ایک ایسی انشورنس پالیسی ہے جو آپ کے گھر یا کسی بیمہ شدہ جائیداد کے اخراجات اور نقصان کا احاطہ کرتی ہے۔ یہ جائیداد انشورنس کی ایک شکل ہے اور انشورنس کی دیگر اقسام میں سے ایک ہے۔

ہوم انشورنس کو دوسرے لفظوں میں گھر کے مالک کی انشورنس بھی کہتے ہیں ۔ یہ پالیسی آپ کے بنگلے/اپارٹمنٹ/کرائے کے فلیٹ/ذاتی گھر کو ہر ممکنہ خطرات سے محفوظ رکھتی ہے۔ یہ کسی بھی ناخوشگوار واقعے کی وجہ سے ہونے والےقیمتی نقصانات کے اخراجات کا احاطہ کرتی ہے۔

ہوم انشورنس کا دعویٰ مندرجہ ذیل وجوہات کی بناء پر ہونے والے نقصان کے لیے کیا جا سکتاہے۔

١۔ یہ پالیسی قدرتی آفات جیسے آندھی، اولے، آگ یا بجلی سے ہونے والے نقصان کا احاطہ کرتی ہے
٢۔ انسانی مسائل جیسے فسادات، چوری، توڑ پھوڑ، یا املاک کی تباہی یا شہری ہنگامے کی وجہ سے ہونے والے نقصان کا احاطہ کرتی ہے۔
٣۔ کسی ریل یا سڑک کی تعمیر کی وجہ سے ہونے والے گھر کے نقصان کا احاطہ کرتی ہے۔
٤۔ ہوائی جہاز سے یا کسی دوسرے کی گاڑی سے تصادم ہونے سےاگر گھر کا نقصان ہوتو یہ اس کا بھی احاطہ کر رہی ہوتی ہے۔
٥۔ اگر کسی دھماکہ سے گھر کونقصان ہو تب بھی ہوم انشورنس آپ کے گھر کا احاطہ کرتی ہے۔

انگلش میں پڑھنے کے لئے یہاں کلک کریں 

پیش کردہ کوریج ہوم انشورنس پالیسی کے تحت

گھر کے مالک کی انشورنس پالیسی میں کئی قسم کے نقصانات کا بھی احاطہ کیا جاتا ہے۔ مثال کے طور پر، ٹوٹے ہوئے پانی کے پائپ، خراب پانی کی لائنیں،یا تباہ شدہ دیواروں، فرش، کھڑکیوں اور دروازوں کے لیے بھی تحفظ فراہم کرتی ہے۔ یہ نا صرف جائیداد بلکہ گھر کے سامان کے نقصانات کا بھی احاطہ کرتی ہے۔

ایسےنقصان کے اخراجات کی چار اقسام ہیں جس کا احاطہ ہوم  پالیسی کرتی ہے۔

١۔ اندرونی نقصان کے اخراجات
٢۔ بیرونی نقصان کے اخراجات
٣۔ گھر سے ذاتی سامان کا نقصان
٤۔ جسمانی چوٹوں کے لیے کوریج جو تباہ شدہ املاک سے ہو سکتی ہے۔

مختلف انشورنس پالیسیاں اس میں مختلف کوریج فراہم کرتی ہیں اس کی کوریج عوامل کی بنیاد پر۔یعنی رہائش کی قسم کرائے کا یا ذاتی ملکیت کا گھر ہے یا پھر رہائش کے سائز کے مطابق مختلف ہوتی ہے۔

دیگر خصوصیات جیسے عمر، رہائش کی جگہ، اور مقام کے ساتھ ساتھ سامان کی قیمت بھی اہمیت رکھتی ہے۔ آپ کے دعوے کی تاریخ یا علاقے میں جرائم کی شرح بھی اہمیت رکھتی ہے۔

آخر میں، یہ آپ پر منحصر ہے کہ آپ کس قسم کی کوریج کا انتخاب کرتے ہیں۔ پریمیم اور کٹوتی کی رقم کے بارے میں یہ آپ کاہی انتخاب ہو گا ہے کہ آپ کس طرح ادا کرنے کے لیے تیار ہیں۔ کٹوتی وہ رقم ہے جو آپ کو دعویٰ کرنے سے پہلے ادا کرنی پڑتی ہے۔

مستثنٰی قرار دینے کا عمل

اگرچہ ہوم انشورنس قدرتی اور انسان ساخت دونوں وجوہات کا احاطہ کرتی ہے، لیکن چند حادثات ایسے ہوتے ہیں جن کا راز فاش کیا جاتا ہے۔ مثال کے طور پر، جان بوجھ کر ہونے والے نقصانات، نظر انداز کیے جانے والے نقصانات، جنگی حالات، یا ‘قدرتی آفات‘ کے لیے کوئی کوریج نہیں ہے۔ یہ اخراج کے طور پر شمار ہوتے ہیں۔

ان میں سے چند ایک کی فہرست درج ذیل ہے

۔ ‘قدرتی آفات‘میں سیلاب اور زلزلے جیسی آفات شامل ہیں لیکن کچھ فراہم کنندگان مخصوص صورتوں یا حسب ضرورت پالیسیوں میں ان آفات کے لیے اضافی کوریج کے ساتھ سامنے آسکتے ہیں۔
۔ دیمک، چوہا، پرندوں، سانچوں کی وجہ سے ہونے والے نقصان کا کوئی احاطہ نہیں۔
۔ اگرچہ کچھ حالات میں دھماکے سے ہونے والے نقصان کا احاطہ ہو سکتا ہے، لیکن یہ صنعتی یا زرعی کاموں سے پیدا ہونے والے نقصان کو کور نہیں کرتا۔
۔ اگر گھر کے کسی ممبر کی طرف سے جان بوجھ کر یا غلطی سے کوئی نقصان پہنچا ہے۔ مثال کے طور پر، کسی کی اپنی گاڑی سے تصادم ہوا ہو تو یہ ہوم انشورنس پالیسی کے تحت نہیں آئے گا۔
۔ آرڈیننس آف لاء یا عدالت کے حکم کے تحت املاک کی کوئی تباہی اس انشورنس کے زمرے میں نہیں آئےگی۔
۔ یہ انشورنس ملک میں ایٹمی خطرات یا جنگ کی وجہ سے  ہونے والےنقصان کا احاطہ نہیں کرتی۔

فوائد

آپ کے پاس ہوم انشورنس پالیسی کیوں ہونی چاہیے۔
ہوم انشورنس کوریج ایک اچھا خیال ہے کیونکہ یہ آپ کو مالی نقصان سے بچاتا ہے۔۔ ہوم انشورنس پالیسی کے فوائد یہ ہیں:

آپ بدقسمت واقعات کی وجہ سے مرمت اور نقصان پر قابو پانے کے لیے مالی امداد حاصل کر سکتے ہیں۔
اگر کوئی فریق ثالث نقصان کا باعث بنتا ہے، تو آپ قانونی جھگڑے میں پڑے بغیر انشورنس کا دعویٰ کر سکتے ہیں۔
اگر پراپرٹی انشورنس ہو تو مرمت/ تعمیر نو/ توسیع کے لیے رہن (ہوم لون) حاصل کرنا آسان ہے۔
گھر کے سامان اور مواد کے نقصان کے اخراجات کو بھی پورا کیا جا سکتا ہے۔ گھریلو سامان جیسے آلات، فرنشننگ، فرنیچر، گیجٹ، یا زیورات
کوریج نہ صرف حادثات یا آفات کی وجہ سے ہونے والے نقصانات کے لیے ہے بلکہ چوری، ڈکیتی یا چوری کی وجہ سے بھی ہے۔
گھریلو انشورنس پالیسیوں کی ایسی قسمیں ہیں جو مخصوص ضروریات کو پورا کرنے کے لیے بنائی گئی ہیں۔ ان پالیسیوں میں مالک مکان کی انشورنس یا کرایہ دار کی انشورنس شامل ہیں۔ جب کرایہ دار کسی صورت کرایہ کی ادائیگی یا کوئی اور نقصان پہنچاتا ہے تو مالک مکان انشورنس کا دعوی کرسکتا ہے۔ اس کے برعکس کرایہ دار کرایہ کے فلیٹ میں اپنے سامان کی انشورنس حاصل کر سکتا ہے۔

ہوم انشورنس کا دعوی کیسے کیا جائے ؟

اپنے گھر کی انشورنس پر دعویٰ کرنے کے لیے آپ کو دستاویزات کی صورت میں نقصان کا ثبوت درکار ہو سکتا ہے۔ جیسے کہ پولیس ایف آئی آرز، تحقیقاتی رپورٹس، اور فائر ڈیپارٹمنٹ کے بیانات، ، اور رہائشی سوسائٹی وغیرہ ۔ مزید یہ کہ، اگر ضروری ہو تو، موت یا معذوری کا میڈیکل سرٹیفکیٹ۔ اس کے علاوہ، آپ کو عدالت میں انوائس یا ملکیت کی دوسری قسم کی تصدیق وغیرہ کی ضرورت پڑ سکتی ہے۔

آپ کو ہوم انشورنس کلیم کرنے کے لیے کٹوتی کی ادائیگی کرنی ہوگی۔ انشورنس کی رقم جو آپ کو ملتی ہے اس کا انحصار آپ کی پالیسی کی قسم پر ہوگا۔ یہ اس بات پر منحصر ہے کہ آیا آپ کی کوریج کی فراہمی اصل نقد قیمت یا متبادل قیمت پر مبنی ہوگی۔ ذیل میں اس کی مزید وضاحت کی گئی ہے:

کسی گھر یا گھر کی شے کی موجودہ مالیت کا تعین اصل نقدی قیمت سے ہوتا ہے۔ یہ شے کی اصل قیمت خرید کو خرابی کی وجہ سے گھٹا دیتا ہے۔ مثال کے طور پر ایک بیمہ شدہ ٹیلی ویژن پر غور کریں جو چوری یا ڈکیتی کے نتیجے میں خراب ہو گیا تھا۔ انشورنس کی رقم کے دعوے کے وقت ٹی وی کی کم ہونے والی قیمت کے لحاظ سے اس کی قیمت ادا کی جائے گی۔

خلاصہ

آج کے بے مثال دور میں، ہوم انشورنس پالیسی ایک ضرورت بن گئی ہے۔ اپنی جائیداد کو غیر متوقع نقصان سے بچانا ہمیشہ ایک اچھا خیال ہوتا ہے۔ انتخاب کرتے وقت، یہ دیکھنا ضروری ہے کہ کون سے اخراجات پورے کیے گئے ہیں آپ رعایت حاصل کرنے کے لیے ایک سے زیادہ انشورنس لے سکتے ہیں۔ اگرچہ آپ بیمہ شدہ گھر کرائے پر دے سکتے ہیں، لیکن اگر آپ گھر بیچتے ہیں تو ہوم انشورنس پالیسی خود بخود منسوخ ہو جائے گی۔

اسی مصنف کے اور مضامین
- Advertisment -

مقبول خبریں