Thursday, May 30, 2024

جیل بھرو، پی ٹی آئی رہنماؤں کے لیے الگ جیلوں کا انتظام

- Advertisement -

لاہور– پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما جنہوں نے “جیل بھرو” تحریک کے حصہ کے طور پر لاہور میں رضاکارانہ طور پر اپنی گرفتاری دی تھی، انہیں مختلف شہروں میں حراست میں لیا جائے گا۔

جیل بھرو تحریک کے نتائج کے مطابق ذرائع کا کہنا ہے کہ پی ٹی آئی کے سینئر نائب صدر شاہ محمود قریشی کو اٹک، جنرل سیکرٹری اسد عمر اور مراد راس کو ڈی جی خان اور اعظم سواتی کو رحیم یار خان بھیجا گیا ہے۔ سابق وزیر داخلہ عمر سرفراز چیمہ کو بھکر جیل جبکہ ولید اقبال کو لیہ جیل میں رکھا جائے گا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ہر رہنما کے ساتھ 10 پارٹی کارکنوں کو جیل میں رکھا جائے گا۔

دریں اثنا، محکمہ داخلہ پنجاب نے 10 ہزار افراد کو جیلوں میں رکھنے کے لیے جگہ بنائی ہے اگر پی ٹی آئی کے کارکنان اور پارٹی رہنما گرفتاری کے لیے خود کو پیش کریں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ پارٹی رہنماؤں اور کارکنوں کی رہائش کے لیے بیرکوں کو خالی کر دیا گیا ہے۔

انگلش میں خبریں پڑھنے کے لئے یہاں کلک کریں

مزید برآں، پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ گرفتار افراد کو ایک ماہ تک حراست میں رکھا جا سکتا ہے اور انہیں کسی سے ملنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔

عمران خان کی زیرقیادت پارٹی نے بدھ کے روز لاہور میں بنیادی حقوق کی خلاف ورزی اور بگڑتی ہوئی معاشی صورتحال کے خلاف عدالتی گرفتاری مہم کا آغاز کیا۔ پولیس نے کہا کہ تقریباً 90 افراد نے اپنی گرفتاری پیش کی ہے جبکہ پی ٹی آئی کے رہنماؤں نے دعویٰ کیا ہے کہ 200 سے زائد گرفتاریاں ہوئی ہیں۔

پشاور ریجن میں پارٹی کے رہنما اور کارکنان آج (جمعرات کو) تحریک کے دوسرے روز میں خود کو گرفتاری کے لیے عدالت میں پیش کریں گے۔ عدالتی گرفتاری مہم 25 فروری کو ملتان، 26 فروری کو گوجرانوالہ، 27 فروری کو سرگودھا اور 28 فروری کو ساہیوال جائے گی۔ یہ یکم مارچ کو فیصل آباد شہر سے ٹکرائے گی۔

پی ٹی آئی کے رہنما جنہوں نے “جیل بھرو” تحریک کے حصہ کے طور پر لاہور میں رضاکارانہ طور پر اپنی گرفتاری دی تھی، انہیں مختلف شہروں میں حراست میں لیا جائے گا۔

اسی مصنف کے اور مضامین
- Advertisment -

مقبول خبریں