Friday, April 12, 2024

کراچی وائٹس قائداعظم ٹرافی کی چیمپئن بن گئی

- Advertisement -

لاہور کے قذافی اسٹیڈیم میں پانچ روزہ فائنل کے آخری روز کراچی وائٹس نے فیصل آباد کو 456 رنز سے شکست دے کر پانچویں مرتبہ قائد اعظم ٹرافی کا ٹائٹل اپنے نام کرلیا۔

فیصل آباد کے کپتان فہیم اشرف آخری بلے باز تھے جو کراچی وائٹس کے  غلام مدثر کی باؤلنگ پر آؤٹ ہوئے، جس نے سرفراز احمد کی قیادت والی ٹیم کے لیے جشن کا آغاز کیا اور  10 ملین روپے کا نقد انعام جیتا۔

انگلش میں خبریں پڑھنے کے لیے یہاں کلک کریں 

کراچی وائٹس کی آخری قائداعظم ٹرافی ٹائٹل جیت 2001-02 کے سیزن میں ہوئی تھی، جب اس نے فائنل میں پشاور کو آٹھ وکٹوں سے شکست دی تھی۔ اس سے پہلے انہوں نے 1990-91، 1991-92 اور 1992-93 میں ٹائٹل کی ہیٹ ٹرک مکمل کی تھی۔

فیصل آباد نے اپنے رات بھر کے سکور 129-6 سے کھیل دوبارہ شروع کیا جس میں لنچ تک فہیم نے پہلے سیشن میں علی اسفند اور خرم شہزاد کے ساتھ فیصل آباد کو 230-8 کے اسکور تک پہنچا دیا۔

اس کے بعد فہیم نے 119 گیندوں پر اپنی چوتھی فرسٹ کلاس سنچری مکمل کی، اور ارشد اقبال کے ساتھ نویں وکٹ کے لیے 57 رنز اور محمد علی کے ساتھ آخری وکٹ کے لیے 51 رنز جوڑے۔ فہیم بالآخر 181 گیندوں پر 147 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے،جو ان کے کیریئر کا بہترین اسکور ہے جس میں 23 چوکے اور دو چھکے شامل تھے۔

کراچی وائٹس کے لیے غلام مدثر نے 3-62 جبکہ شاہنواز دہانی نے 2-119 حاصل کیے۔ میر حمزہ، نعمان علی اور اسد شفیق نے ایک ایک وکٹ حاصل کی۔

پوائنٹس ٹیبل

ٹورنامنٹ کے راؤنڈ رابن مرحلے کے اختتام پر، فیصل آباد پوائنٹس ٹیبل پر سرفہرست تھا اور کراچی وائٹس سٹینڈنگ میں دوسرے نمبر پر تھی۔ پشاور کے صاحبزادہ فرحان 10 اننگز میں 847 رنز بنا کر بیٹنگ چارٹ میں سرفہرست رہے اور انہیں ٹورنامنٹ کے بہترین بلے باز کا ایوارڈ دیا گیا۔ پہلی اننگز میں 203 اور دوسری اننگز میں 109 رنز بنانے پر کراچی وائٹس کے صائم ایوب کو فائنل کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا۔

اسی مصنف کے اور مضامین
- Advertisment -

مقبول خبریں