Thursday, May 30, 2024

مولوی عبدالکبیر افغانستان کے وزیر اعظم مقرر

- Advertisement -

طالبان کے سینئر رہنما ہیبت اللہ اخوندزادہ نے مولوی عبدالکبیر کو بدھ کے روز افغانستان کا وزیر اعظم مقرر کیا.

ہیبت اللہ اخوندزادہ کے صحت یاب ہونے تک، مولوی عبدالکبیر، جو اس سے قبل سیاسی امور کے لیے افغانستان کے وزیر اعظم کے عہدے پر فائز تھے، طالبان انتظامیہ کی قیادت کریں گے۔

واضح رہے کہ ہیبت اللہ اخوندزادہ 2021 میں جب سے اس گروپ نے دوبارہ کنٹرول حاصل کیا تھا۔ تب سے طالبان حکومت کے وزیر اعظم تھے۔

انگلش میں پڑھنے کے لئے یہاں کلک کریں

طالبان کی قیادت کی جانب سے اخوند کی حالت کے بارے میں معلومات روکنے کے باوجود، ذرائع کے حوالے سے ایک پریس رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ انہیں دل کی تکلیف تھی۔

مولوی کبیر کے بارے میں دعویٰ کیا جاتا ہے کہ وہ زدران قبیلے کے رکن ہے اور ان کا تعلق مشرقی صوبہ پکتیکا سے ہے۔ 1996 سے 2001 تک، وہ طالبان کی پچھلی حکومت میں صوبہ ننگرہار کے گورنر کے طور پر صدارت کرتے رہے۔

وہ طالبان کی ان سینئر ترین شخصیات میں سے ایک ہیں۔ جنہوں نے قطر میں امریکہ کے ساتھ مذاکرات میں اہم کردار ادا کیا۔ جس کی وجہ سے طالبان اور امریکہ نے دوحہ معاہدے پر دستخط کئے۔

اگست 2021 میں طالبان کے دوبارہ کنٹرول پر قبضہ کرنے کے بعد مولوی کبیر نے اخوند کے اقتصادی نائب کے طور پر خدمات انجام دیں، اور بعد میں وہ طالبان کے سیاسی نائب کے وزیر اعظم کے طور پر کام کرتے رہے۔

اسی مصنف کے اور مضامین
- Advertisment -

مقبول خبریں