Wednesday, April 24, 2024

پاکستان خطروں سے دو چار ان 20 ممالک میں شامل

- Advertisement -

اقوام متحدہ کے گلوبل انفارمیشن اینڈ ارلی وارننگ سسٹم رپورٹ کے مطابق، پاکستان زیادہ بارشوں کے خطرے سے دوچار ان 20 ممالک میں شامل ہے۔

اسلام آباد، اقوام متحدہ کے فوڈ اینڈ ایگریکلچر آرگنائزیشن کے گلوبل انفارمیشن اینڈ ارلی وارننگ سسٹم کی جانب سے تیار کی گئی ایک رپورٹ کے مطابق، پاکستان ان 20 ممالک میں سے ایک ہے جو لا نینا کے تین سال بعد جون میں ال نینو سمندروں کی وجہ سے زیادہ بارشوں کا سامنا کرنے کے خطرے سے دوچار ہیں۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ 20 ممالک ضرورت سے زیادہ بارشوں کے خطرے سے دوچار ہیں، وہیں 42 ممالک کو خشک سالی جیسے حالات کے خطرے کے ساتھ ایل نینو کے اثرات کا بھی اندیشہ ہے۔

انگلش میں خبریں پڑھنے کے لئے یہاں کلک کریں

افغانستان، ارجنٹائن، آرمینیا، آذربائیجان، بنگلہ دیش، ایران، عراق، قازقستان، کینیا، کرغزستان، میکسیکو، پاکستان، پیراگوئے، شام، تاجکستان، ترکمانستان، امریکہ اور ازبکستان ان ممالک میں شامل ہیں جو شدید بارش کے خطرے سے دوچار ہیں۔

بدھ کے روز منظر عام پر آنے والے تجزیے میں ان ممالک کی نشاندہی کرنے کی کوشش کی گئی جہاں ایل نینو کی وجہ سے 2023-2024 میں خشک موسمی حالات پیدا ہوں گے اور اناج کی پیداوار کو منفی طور پر متاثر کریں گے، ممکنہ طور پر مقامی غذائی عدم تحفظ کو مزید خراب کریں گے۔

ہنگر ہاٹ سپاٹ کی تازہ ترین رپورٹ کے مطابق 53 ممالک اور خطوں میں 222 ملین افراد پہلے ہی شدید غذائی عدم تحفظ کا شکار ہوں گے۔

رپورٹ کے مطابق لا نینا کا لگاتار یہ تیسرا واقعہ ہے جو 1950 سے اب تک صرف دو بار ہوا ہے۔ لا نینا کے واقعات اکثر آسٹریلیا کے گیلے موسم اور امریکہ، جنوبی امریکہ، اور مشرقی افریقہ میں خشک موسم سے منسلک ہوتے ہیں۔

اسی مصنف کے اور مضامین
- Advertisment -

مقبول خبریں