Monday, April 22, 2024

پاکستانی سرجن نے روبوٹک سرجری میں عالمی ریکارڈ قائم کر دیا

- Advertisement -

لاہور کے کڈنی اینڈ لیور انسٹی ٹیوٹ نے پاکستان میں پہلی بار روبوٹک سرجری کر کے تاریخ قائم کر دی۔

روبوٹک سرجری کی ترقی کے نتیجے میں، طب کی شعبے میں ایک انقلابی تبدیلی آئی ہے۔ جو سرجنوں کو ایسی جگہوں پر کام کرنے کی اجازت دیتی ہے جہاں پہلے انسانی ہاتھ نہیں پہنچ سکتے تھے۔

ماہر سرجنوں نے ایک روبوٹ کی مدد سے گردے کا پہلا آپریشن کامیابی کے ساتھ انجام دیا۔ جس نے ایک اہم سنگ میل عبور کیا جس سے ہر ماہ مزید کئی آپریشن کیے جا سکیں گے۔

انگلش میں پڑھنے کے لئے یہاں کلک کریں

لندن کے چیلسی اور ویسٹ منسٹر ہسپتال میں، ڈاکٹر رضا سرجنوں کی ایک ٹیم کی قیادت کر رہے ہیں۔ جنہوں نے دو دنوں میں اب تک کے سب سے زیادہ پیچیدہ امراض نسواں کے آپریشن کا نیا ریکارڈ قائم کیا۔ اس میں ایک دن میں 12 بڑے آپریشنز انجام دینے کے ساتھ ساتھ جدید روبوٹک ٹیکنالوجی کا استعمال بھی شامل ہے۔

سرجری کرنے کے ساتھ ساتھ ملتان سے تعلق رکھنے والے اور نشتر میڈیکل کالج کے سابق طالب علم عامر رضا نے ایک ہی دن میں 12 بڑی سرجری کر کے عالمی ریکارڈ اپنے نام کیا۔

ہنرمند ڈاکٹروں کی مدد سے کروڑوں روپے کے روبوٹ کے ذریعے اب متعدد آپریشن کیے جا رہے ہیں۔

پاکستان کڈنی اینڈ لیور انسٹی ٹیوٹ میں یورولوجی ڈویژن کے سربراہ ڈاکٹر ندیم نصرت کا دعویٰ ہے، کہ روبوٹک سرجری سے نہ صرف وقت بلکہ پیسے کی بھی بچت ہوگی۔

علاج کے دوران مریض کا جسم کم متاثر ہوتا ہے۔ اس لیے وہ جلد صحت یابی کے دورانیے کا اندازہ لگا سکتے ہیں۔

اسی مصنف کے اور مضامین
- Advertisment -

مقبول خبریں