Tuesday, May 28, 2024

غریبوں کے لیے پیٹرول پر 50 روپے کی سبسڈی

- Advertisement -

لاہور: وزیر اعظم شہباز شریف کا کہنا ہے کہ پیٹرولیم ریلیف پیکیج کے تحت کم آمدنی والے لوگوں کو پیٹرول پر 50 روپے فی لیٹر سبسڈی دی جائے گی۔

یہاں ریلیف پیکیج پر ایک جائزہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے، انہوں نے کہا کہ 50 روپے فی لیٹر پیٹرول کم آمدنی والے صارفین کو دیا جائے گا جن کے پاس موٹر سائیکل، رکشہ، 800 سی سی کاریں اور دیگر چھوٹی کاریں ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پیٹرولیم سبسڈی کا پروگرام جلد شروع کیا جائے گا اور سبسڈی پروگرام پر موثر عمل درآمد کے لیے متعلقہ محکموں کے تعاون سے ایک جامع حکمت عملی بنائی جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ موٹرسائیکل، رکشہ اور چھوٹی کاریں کم آمدنی والے لوگ استعمال کرتے ہیں اور پیٹرولیم سبسڈی سے غریبوں کو ریلیف ملے گا۔

انگلش میں خبریں پڑھنے کے لئے یہاں کلک کریں

انہوں نے مزید کہا کہ حکومت اپنی معاشی مشکلات کے باوجود غریب لوگوں کی ہر ممکن مدد کے لیے کوششیں کر رہی ہے۔

وزیر مملکت برائے پیٹرولیم مصدق ملک نے معاشرے کے کم آمدنی والے طبقے کو پیٹرولیم سبسڈی فراہم کرنے کی حکمت عملی سے آگاہی فراہم کی۔

اجلاس میں وزیر خزانہ اسحاق ڈار، وزیراعظم کے مشیر احد چیمہ، وزیراعظم کے معاون خصوصی طارق باجوہ، سیکرٹری خزانہ، سیکرٹری پٹرولیم اور اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔

دریں اثناء وزیراعظم نے آج (پیر) اسلام آباد میں اپنے اتحادیوں کا ہنگامی اجلاس طلب کرلیا۔

یہ فیصلہ پاکستان مسلم لیگ نواز (پی ایم ایل این) کے صدر شہباز شریف اور سینئر نائب صدر مریم نواز کے درمیان ماڈل ٹاؤن میں ہونے والی ملاقات میں کیا گیا۔

مریم نواز نے شہباز شریف کی رہائش گاہ پہنچ کر ان سے تفصیلی ملاقات کی جس میں ذرائع کے مطابق پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان سے نمٹنے کے لیے آئندہ کی حکمت عملی پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ دونوں رہنماؤں نے زمان پارک کے حالیہ واقعات اور عمران خان کے دورہ اسلام آباد پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا۔ انہوں نے رمضان المبارک کے دوران شہریوں کو ریلیف فراہم کرنے کے ساتھ ساتھ ملک کی سیاسی اور معاشی صورتحال پر بھی تبادلہ خیال کیا۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ شہباز شریف پی ایم ایل این حکومت کی اتحادی جماعتوں کا اجلاس بلائیں گے اور انہیں صورتحال سے آگاہ کریں گے۔ مسلم لیگ ن کے قائد میاں نواز شریف بھی ویڈیو لنک کے ذریعے اجلاس میں شرکت کریں گے۔

ذرائع کے مطابق اس اجلاس میں آئندہ عام انتخابات کے شیڈول پر بھی غور کیا جائے گا اور اتحادی جماعتوں کی قیادت سے سفارشات طلب کی جائیں گی۔

اسی مصنف کے اور مضامین
- Advertisment -

مقبول خبریں