Thursday, May 30, 2024

سندھ کے اسکولوں میں شیشے کی بوتلوں میں لمکا کی فروخت پر پابندی عائد

- Advertisement -

کراچی: ڈائریکٹوریٹ آف انسپیکشن اینڈ رجسٹریشن آف پرائیویٹ انسٹی ٹیوشنز سندھ ڈی آئی آر پی آئی ایس نے سوفٹ ڈرنک کی بوتل پھٹنے سے زخمی ہونے والے ایک نوجوان طالب علم کی المناک موت کے بعد اسکولوں میں لمکا اور سوڈا ڈرنکس کی فروخت پر پابندی عائد کرنے کا اعلان کردیا۔

ڈی آئی آر پی آئی ایس کی طرف سے جاری کردہ نوٹیفکیشن کے مطابق، نجی طور پر زیر انتظام تمام اسکولوں کے پرنسپل اور منتظمین کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں کہ شیشے کی بوتلوں میں لمکا/سوڈا ڈرنکس کو اسکول کے احاطے میں رکھنے/بیچنے کی اجازت نہ ہو۔

تاہم، اسکولوں میں پلاسٹک کی بوتلوں یا کین میں موجود سافٹ ڈرنکس فروخت کیے جا سکتے ہیں۔ پابندی سندھz کے 6 ڈویژنوں بشمول کراچی، حیدرآباد، سکھر، میرپور خاص، بے نظیر آباد اور لاڑکانہ ڈویژن میں عائد کی گئی تھی۔

انگلش میں پڑھنے کے لئے یہاں کلک کریں

نوٹیفکیشن میں کہا گیا کہ “یہ اقدام بچوں کی حفاظت کے ساتھ ساتھ مستقبل میں پیش آنے والے ناخوشگوار واقعات سے بچنے کے لیے کیا جا رہا ہے۔”

واضح رہے کہ کراچی کے ایک اسکول میں سافٹ ڈرنک کی بوتل کا گلاس کاٹ کر زخمی ہونے والا طالب علم زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسا۔

واقعہ ملیر کے علاقے ماڈل کالونی میں واقع نجی اسکول میں پیش آیا جس کے دوران پانچویں جماعت کا طالب علم حذیفہ زخمی ہوگیا۔

اسے سول ہسپتال کے ٹراما سینٹر لے جایا گیا اور اس کے انتہائی نگہداشت یونٹ (آئی سی یو) میں زیر علاج تھا۔ بچے کے والد کے مطابق اس کی موت طبی سہولت کے دوران علاج کے دوران ہوئی۔

اسی مصنف کے اور مضامین
- Advertisment -

مقبول خبریں