Tuesday, July 16, 2024

برطانیہ کے ہسپتال سے نواز شریف کی میڈیکل رپورٹ جاری

- Advertisement -

پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنما اور سابق وزیراعظم نواز شریف نے جمعہ کو لاہور ہائی کورٹ میں صحت کی میڈیکل رپورٹ جمع کرائی۔

تفصیلات سے پتہ چلتا ہے کہ نواز شریف کی صحت کی میڈیکل رپورٹ اٹارنی امجد پرویز نے رجسٹرار آفس کو پہنچائی تھی۔

برطانوی ڈاکٹر کی رپورٹ کے مطابق نواز شریف کو اب بھی دل کی تکلیف ہے۔ ذیابیطس اور دیگر بیماریوں کی وجہ سے، نواز شریف کو پاکستان اور لندن دونوں میں جاری فالو اپ کیئر کی ضرورت ہے۔

انگلش میں پڑھنے کے لئے یہاں کلک کریں 

رپورٹ میں سابق وزیراعظم کے ڈاکٹر کا کہنا تھا کہ نواز شریف نے اینٹی انجائنل تھراپی کو بڑھانے کے لیے ہم سے علاج کروایا۔ درد اور تکلیف اور کورونا وائرس نے مسلم لیگ ن کے رہنما کو پاکستان کا سفر کرنے سے روک دیا۔ ہم نے اس کی انجیو پلاسٹی کو دہرانے کا فیصلہ کیا کیونکہ اس کی علامات خراب ہوگئیں۔

کہانی یہ بتاتی ہے کہ نومبر 2022 میں نواز شریف کی انجیو پلاسٹی ہوئی تھی اور ساتھ ہی دل کے اسٹینٹ بھی لگائے گئے تھے۔

یہ بات اجاگر کرنا ضروری ہے کہ برطانیہ کے رائل برومپٹن ہسپتال کے کنسلٹنٹ کارڈیالوجسٹ پروفیسر کارلو ڈی ماریو نے سابق وزیراعظم کی میڈیکل رپورٹ فراہم کی۔

یہ امر اہم ہے کہ مسلم لیگ ن کے رہنما نے اعلان کیا ہے کہ وہ 21 اکتوبر کو پاکستان واپس آئیں گے۔سابق وزیراعظم اسی دن مینار پاکستان میں ایک بڑے عوامی جلسے سے خطاب کریں گے جس دن ان کی پارٹی کا آغاز ہوا تھا۔

اسی مصنف کے اور مضامین
- Advertisment -

مقبول خبریں