Thursday, February 29, 2024

روحانی پیشوا بشریٰ بی بی کون ہیں؟

- Advertisement -

سابق پاکستانی وزیر اعظم عمران خان کی شریک حیات بشریٰ بی بی پر اسی کیس میں بدعنوانی کا الزام ہے جس کے نتیجے میں عمران خان کو 9 مئی میں حراست میں لیا گیا تھا۔ وہ پیر کو عمران خان کے ساتھ عدالت گئیں جہاں انہیں محفوظ ضمانت مل گئی۔

وہ اپنی روحانیت اور تصوف سے عقیدت کے لیے مشہور ہیں، جو اسلام کی ایک صوفیانہ شکل ہے۔ 70 سالہ عمران نے اکثر بشریٰ بی بی کو اپنا روحانی پیشوا کہا ہے۔

جب وہ پیدا ہوئیں انکا نام بشریٰ ریاض وٹو تھا لیکن شادی کے بعد انہوں نے اپنا نام بدل کر خان رکھ لیا۔ انہیں ان کے شوہر اور حامی اکثر بشریٰ بی بی یا بشریٰ بیگم کے نام سے پکارتے ہیں۔

انگلش میں خبریں پڑھنے کے لیے یہاں کلک کریں

بشریٰ، جو پنجابی زمینداروں کے خاندان سے تعلق رکھتی ہیں۔ اس کی ابتدائی زندگی کی تفصیلات غیر واضح ہیں۔

انکی پہلی شادی پنجابی خاندان کے کسٹم اہلکار خاور فرید مانیکا سے ہوئی جو تقریباً 30 سال تک چلی۔

مقامی میڈیا کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ میں اپنی سابقہ اہلیہ بشریٰ بی بی کے بارے میں واضح طور پر بتانا چاہتا ہوں کہ میں نے 2018 میں ان کی طلاق کے بعد دنیا میں ان جیسی پرہیزگار خاتون نہیں دیکھی۔

بشریٰ اور مانیکا کے پانچ بچے ہیں۔

بابا فرید کے پیرو کار

فرید الدین مسعود گنج شکر، جنہیں اکثر بابا فرید کے نام سے جانا جاتا ہے، ایک قابل احترام صوفی اور بزرگ ہیں جن کا مزار پنجاب میں مانیکا کے آبائی شہر پاکپتن میں واقع ہے۔ بشریٰ اور ان کے سابق شوہر مانیکا دونوں بابا فرید کے پیروکار ہیں۔

عمران کے مخالفین بشریٰ پر جادو ٹونے کا الزام لگاتے ہیں، اس الزام کی عمران کے حامیوں نے اکثر تردید کی ہے، وہ پاکستانی جو بشریٰ کی سنت سے لگن کو سراہتے ہیں وہ انہیں روحانی پیشوا کہتے ہیں۔ بشریٰ نے 2018 سے ایک نایاب انٹرویو میں کہا کہ لوگ مجھے خدا اور رسول کے قریب ہونے کے لیے دیکھنے آئیں گے۔

پہلی ملاقات

یہ واضح نہیں کہ عمران کی بشریٰ سے پہلی ملاقات کب اور کیسے ہوئی لیکن ایک سابق معاون عون چوہدری کے مطابق وہ ان کی روحانیت سے بہت متاثر ہوئے۔

عمران اور بشریٰ نے وزیراعظم منتخب ہونے سے سات ماہ قبل 2018 میں ایک نجی تقریب میں شادی کی تھی۔ خان  نے اس سے قبل ٹی وی صحافی ریحام نیئر خان اور کاروباری شخصیت جیمز گولڈ اسمتھ کی بیٹی جمائما گولڈ اسمتھ سے شادی کی تھی۔ عمران کی یہ تیسری شادی ہے۔

عمران کے وزیر اعظم منتخب ہونے سے چند ماہ قبل، مقامی میڈیا نے بابا فرید کے مزار پر سجدہ کرتے ہوئے جوڑے کی تصاویر شائع کی تھیں۔ انٹرویو میں بشریٰ نے کہا کہ خان صاحب کی زندگی کا ہر لمحہ اب خدا، رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم اور بابا فرید کی محبت کے لیے وقف ہے۔

اپنے اقتدار کے دوران، بشریٰ نے اپنے شوہر کے ساتھ سعودی عرب کے دورے کے علاوہ کسی بھی سرکاری بیرون ملک مشن پر سفر نہیں کیا، صرف وہ مکہ اور مدینہ کے مقدس شہروں میں دیکھی گئں۔ بشریٰ کو اکثر عوام میں نقاب اور برقعہ پہنے دیکھا جاتا ہے جہاں صرف ان کی آنکھیں ہی نظرآتی ہیں۔

اسی مصنف کے اور مضامین
- Advertisment -

مقبول خبریں